چیئر مین ایف بی آر جاوید غنی کی مستقل تعیناتی حکومت کا احسن اقدام، نعیم صدیقی

پی ٹی آئی کی حکومت کی جانب سے ایک طویل عرصے کے بعد ایف بی آر کے مستقل چئیرمین کا تقرر کر دیا گیا ہے جو کہ خوش آئند اقدام ہے اور پاکستان کی تاجر برادری نے اس فیصلے کو پاکستان کی معیشت کیلئے ایک شاندار اقدام قرار دیا ہے۔ اگرچہ اس عہدے پر مستقل تعیناتی کی بہت پہلے ضرورت تھی۔ وفاقی کابینہ کی جانب سے محمد جاوید غنی کو تقریبا 5 ماہ کے وقفے کے بعد فیڈرل بورڈ آف ریونیوکا مستقل چیئرمین مقرر کردیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ جولائی کے پہلے ہفتے میں یہ منصب خالی ہوا تھا جب اس وقت کی ایف بی آر کی چیئرپرسن نوشین امجد کا تبادلہ کرکے انھیں وفاقی سیکریٹری کے عہدے پر تعینات کیا گیا تھا۔اس کے بعد سے جاوید غنی کو ایف بی آر کے چیئرپرسن کا اضافی چارج سونپا گیا تھا۔یہاں یہ بات قابل غور ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے اگست 2018 میں اقتدار سنبھالنے کے بعد سے اب تک اس عہدے پر چوتھی تعیناتی کی ہے۔پہلے مرحلے میں جاوید غنی کو 3 ماہ کی مدت کے لیے اضافی چارج دیا گیا تھا جو اکتوبر میں مزید 3 ماہ بڑھا دیا گیا تھا۔جاوید غنی پاکستان کسٹم سروس کے 22 گریڈ کے آفیسر ہیں جو ایف بی آر ممبر پالیسی کسٹم کے عہدے پر تعینات ہیں۔ان کی ٹوئٹر پروفائل کے مطابق جاوید غنی نے واروک یونیورسٹی سے بین الاقوامی معاشی قانون میں ایل ایل ایم یعنی ماسٹر آف لاکی ڈگری حاصل کررکھی ہے۔ایف بی آر کے چیف کے عہدے پر جاوید غنی کی مستقل تعیناتی کی منظوری کی سمری وفاقی کابینہ نے منظور کی جس کی سربراہی وزیر اعظم عمران خان کر رہے تھے۔دوسری جانب ٹیکس عہدیداروں کا خیال ہے کہ پی ٹی آئی حکومت کے دوسرے سال میں ایف بی آر کو ریونیو کی وصولی میں بڑے شارٹ فال کا سامنا رہا ہے۔ایک اندازے کے مطابق جون 2021 تک ریونیو شارٹ فال 400 سے 600 ارب روپے تک رہا۔مزید یہ کہ موجودہ 5 مہینوں میں گزشتہ سال کے مقابلے میں ریونیو وصولی میں صرف 4 فیصد سے زیادہ کا اضافہ دیکھا گیا۔
ایف بی آر نے بین الاقوامی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف کو یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ رواں مالی سال کے لیے 24 فیصد سے زیادہ اضافے کا ریونیو ہدف حاصل کرے گا۔تاہم ایف بی آر نے ملک میں سنگل سیلز ٹیکس سمیت مطلوبہ اصلاحات لانے کے لیے ورلڈ بینک کے فنڈ سے چلنے والے منصوبوں کی ڈیڈ لائن کو بھی پورا نہیں کیا ہے۔یاد رہے کہ 6 اپریل 2020 کو حکومت نے نوشین امجد کو ایف بی آر سربراہ نامزد کیا تھا۔تاہم تین مہینوں کے بعد ہی انہیں تبدیل کردیا گیا تھا اور کابینہ نے بعد میں شبر زیدی کی اعزازی / پرو بونو تعیناتی ختم کردی تھی جو دو سال تک رہنی تھی۔فروری میں یہ عہدہ خالی ہوا تھا جب شبر زیدی 21 جنوری کو دفتر میں شمولیت حاصل کرنے کے چند روز بعد ہی غیر معینہ مدت کے لیے طبیعت کی خرابی کی وجہ سے چھٹی پر چلے گئے تھے۔ان کی غیر موجودگی میں ایف بی آر ممبر کے عہدے پر تعینات نوشین امجد نگراں چیئرپرسن تھیں۔ یہ بھی مدنظر رہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے مئی 2019 میں شبر زیدی کو ایف بی آر کے چیئرمین کے عہدے پر تعینات کیا تھا تاکہ وہ مطلوبہ اصلاحات لائیں اور 20-2019 کے 55 کھرب روپے کے ریونیو جمع کرنے کا ہدف حاصل کرنے کے لیے کام کریں۔ قبل ازیں شبر زیدی نے محمد جہانزیب خان کے بعد یہ عہدہ سنبھالا تھا جنہیں اگست 2018 میں ایف بی آر سربراہ کا چارج سونپا گیا تھا۔تاجر برادری کی جانب سے حکومت کے اس اقدام کو ملک کی معیشت کیلئے خوش آئند قرار دیا جا رہا ہے کیونکہ ایف بی آر کا مستقل چیئر مین ہی ٹیکس اور پاکستان کی معیشت سے وابستہ دیگر معاملات کو پوری ذمہ داری کے ساتھ دیکھنے کے علاوہ فوری اور ضروری اقدامات اٹھا سکتا ہے۔

https://credit-n.ru/kredit/kredit-vostok.html buy over the counter medicines https://credit-n.ru/order/zaymyi-vivus-leads.html https://credit-n.ru/offer/ipoteka-bank-otkritie.html https://credit-n.ru/order/kreditnye-karty-bank_tinkoff-airlines.html https://credit-n.ru/offers-zaim/zaymer/ срочный займ на карту онлайн buy over the counter medicines центрофинанс займ онлайнбыстрый займ ногинскмфо займ-онлайн деньги в займ онлайн на картузайм на вебмани с формальным аттестатомполучить быстрый займ на карту взять займ онлайн на карту сбербанказайм в калининградезайм вебмани с формальным аттестатом займ на карту круглосуточно с плохой кредитной историейденьги займ москвазайм без данных о работе займ без звонковзайм 50000екапуста займ онлайн займ онлайн без работызайм онлайн без кизайм экспресс екатеринбург займ под расписку челябинскзайм студентамденьги займ онлайн займ на банковский счетчастный займ под расписку у нотариусасмарт займ взять займ для исправления кредитной историизайм лобнязайм за час мтс займполучить займ на киви кошелекзайм 1000 рублей на карту онлайн займ 100000 на картузайм онлайн без проверки киденьги в долг займ займ 5000 рублей на картубеспроцентный займ работникубез процентный займ

وٹس ایپ کے ذریعے خبریں اپنے موبائل پر حاصل کرنے کے لیے کلک کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں