پی ٹی آئی کی حکومت کی جانب سے ورلڈ بنک سے ایک جدید ہائبرڈ سوشل پروٹیکشن اسکیم نافذ کرنے کے لیے ساٹھ کروڑ ڈالر کے قرض کی درخواست کی گئی ہے جس کا بنیادی مقصد معاشرتی تحفظ کے نظام میں بہتری لانا اور اس کو کامیابی کے ساتھ آگے بڑھانا ہے۔ قرض کی یہ رقم خطرات کے خاتمے،غریب اور غیر رسمی ورکرز کی مالی شمولیت سے متعلق ان کی امداد کیلئے استعمال کی جا سکے گی۔سادہ ترین لفظوں میں یہ کہا جا سکتا ہے کہ ہمارے معاشرے کے وہ لوگ جو کسی بھی قسم کی باقاعدہ سماجی امداد کے زمرے میں نہیں آتے اور نہ ہی ان کی رسائی ایسے اداروں تک ہوتی ہے جووفاقی حکومت کے ماتحت مستحق و نادار لوگوں کی امداد کیلئے کام کرتے ہیں ایسے کمزور اور پسماندہ ترین طبقے کے لوگوں کو زندگی کی بنیادی ضروریات کی فراہمی کیلئے یہ پروگرام شروع کیا جا ئے گا۔  ورلڈ بینک کی ایک نئی دستاویز میں یہ کہا گیا ہے کہ یہ منصوبہ پاکستان کو بحران سے بچانے والے معاشرتی تحفظ پروگرام کے تحت درمیانے طبقے کو نقصان پہنچانے والے خطرے کو کم کرنے میں مدد کے لیے اور معاشرتی رسک کو کم کرنے والے عناصر کے ساتھ معاشرتی مدد کا امتزاج کرے گا۔ اس امداد کا بنیادی ماڈل، امدادی بچت اسکیم ہو گا جس میں مراعات کو بھی شامل کیاجائے گا اور قرض کی واپسی کے لیے مختصر سے عرصے پر محیط درمیانی مدت ہوگی، اس طرح کے پروگرام دنیا کے دوسرے ممالک میں بھی جاری ہیں ۔پاکستان بھی ان ممالک کے اسی طرح کے پروگراموں سیرہنمائی اور مدد لیتے ہوئے اس پر عمل درآمد کرے گا۔جو لوگ انفرادی طور پرقرض لیں گے ان میں سے کسی سے بھی اس کی اپنی بچت کو جلد واپس لینے پر جرمانہ عائد نہیں کیا جائے گا تاہم کم سے کم وقت کی مدت تک پہنچنے سے قبل شراکت تک ان کی رسائی نہیں ہوگی۔بنیادی طور پر دیکھا جائے تو یہ پاکستان میں ایک بالکل نئی اسکیم ہے اس لیے یہ طے کیا گیا ہے کہ ورلڈ بینک کے تکنیکی معاون ادارے کی مدد سے پہلے مرحلے کے دوران ڈیزائن کے پیرامیٹرز کا سختی سے تجربہ کیا جائے گا۔
اس پروگرام کے مطابق پہلے مرحلے کے دوران ہائبرڈ اسکیم بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھانے والے موجودہ افراد کے ایک ذیلی سیٹ کے لیے کھولی جائے گی اور اس میں کامیابی ہوئی تو اس اسکیمکا دائرہ کار آہستہ آہستہ زیادہ سے زیادہ آبادی تک بڑھایا جاسکتا ہے۔کورونا وائرس بحران نے غریب ترین افرادکو سب سے زیادہ متاثر کیا ہے اور ان کو تحفظ فراہم کرنے کی ضرورت کہیں زیادہ ضروری ہو گئی ہے ایسے لوگ امداد کے زیادہ مستحق ہیںجو موجودہ حفاظتی نیٹ ورک سے باہر ہیں اور انہیں ملک میں موجود محدود رسمی نظاموں سے خارج کردیا گیا ہے۔ایسے لوگ نہایت بے کسی اور بے بسی کی زندگی گذارنے پر مجبور ہوتے ہیں۔ان کی امداد کیلئے باقاعدہ ادارے مدد نہیں کرتے اور نہ ہی وہ سرکاری امداد سے مستفید ہوتے ہیں۔اس کے لیے ضروری ہے کہ جو بھی بنیادی ضروریات اور طریقہ کار ہو سکتا ہے اس پر کام کیا جائے اور اس نئے نظام کومتعارف کرانے کی ضرورت ہے جو معاشرتی مدد سے آگے بڑھایا جا سکے اور معاشرتی تحفظ کی چھتری کے تحت نادار و غریب اورکمزور آبادی کے ایک بڑے طبقے کو سامنے لانے کے ساتھ ساتھ معاشرتی تحفظ کی فراہمی کے موجودہ نظام کو مستحکم کرنے اور آگے بڑھانے کے قابلبنایا جائے تاکہ ان کو معاشی و سماجی بحرانوں کی صورتحال کے لیے زیادہ جوابدہ بنایا جاسکے اور اس کے ساتھ ساتھ معاشرے کے کمزور طبقات کی بہتر طریقے کے ساتھ داد رسی کی جا سکے تاکہ وہ زندگی کی بنیادی ضروریات سے مستفید ہو سکیں۔
ورلڈ بینک کے دستاویز میں کہا گیا کہ یہ پروگرام معاشرتی تحفظ کی فراہمی کے نظام کو بڑھانے کی حمایت کرے گا، سوشل رجسٹری اور بائیو میٹرک طریقے سے رقوم کی ادائیگی کے نظام سمیت دونوں معاشروں کے دوران آبادی کی ضروریات کو اپنانا، معاشرتی تحفظ کے نظام کی مجموعی صلاحیت میں اضافہ وغیرہ شامل ہیں۔اس کے ساتھ ساتھ اس کا مقصد ہائبرڈ سماجی تحفظ اسکیم کے ذریعے مشروط نقد رقم کی منتقلی اور گھریلو بچت کے ذریعے انسانی سرمائے کے تحفظ کو فروغ دے کر غریب اور کمزور گھرانوں میں بحران کے خلاف لچک پیدا کرنا ہے۔پاکستان نے ایک دہائی کے دوران اپنے معاشرتی تحفظ کے نظام میں خاطر خواہ سرمایہ کاری کی ہے اور اس کا نتیجہ ہے کہ غربت میں کمی آ رہی ہے۔
پاکستان کا معاشرتی تحفظ کا نظام، جو 2008 میں قائم کیا گیا تھا، بہت سے بڑے معاشرتی امدادی پروگراموں پر مشتمل ہے جو غریبوں اور کمزوروں کی ضروریات پر رد عمل دینے کی کوشش کرتا ہے موجودہ حکومت کی جانب سے اس پروگرام کو احساس’ کے ایجنڈے میں نمایاں کیا گیا ہے۔یہ پروگرام وفاقی سطح پر چلائے جاتے ہیں تاہم صوبوں نے احساس کے مقاصد کی تکمیل کے لیے متوازی سماجی تحفظ کے پروگرام بھی شروع کیے ہیں جو کہ خوش آئند بات ہے اوراس قسم کے سماجی منصوبے اور پروگرام معاشرے میں غربت کم کرنے میں معاون و مددگار ثابت ہوں گے۔

https://credit-n.ru/order/zaim-migone.html https://credit-n.ru/order/zaymyi-myzaim-leads.html hairy woman микрозайм онлайн взять займ в екатеринбургезайм на 30 днейзайм с плохой кредитной историей самара быстро деньги займбыстрый займ наличнымизайм наличными в день обращения частный займ нижний новгородзайм под залог имуществазайм 3000 на карту займ сто процентовбыстро займ нижний новгородзайм робот на карту срочный займ на длительный срокзайм онлайн заявказайм срочно без отказов и проверок на карту займ без отказа на банковский счетзайм онлайн мфозайм 250 000 займ наличнымивеб займ личный кабинетонлайн займ на киви без отказа займ онлайн 50000быстрый займ в хабаровскемини займ на банковскую карту до зарплаты займзайм на карту с плохой кредитной историейоформить займ онлайн займ на карту москвабыстрый займ через интернетвзять быстро займ оформить займ на карту сбербанка онлайнзайм денег в интернетевзять займ без проверки кредитной истории

Leave a comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *